شیئرکریں

raw_imageاسلام آباد:را کے گرفتار ایجنٹ کلبھوشن یادو نے سمندر میں پاک بحریہ کے جہاروں، بندرگاہوں اور تنصیبات کو نشانہ بنانے کے منصوبے کا اعتراف کرلیا ہے۔ جبکہ سیکیورٹی اداروں نے را ایجنٹ کے موبائل فون اورانٹرنیٹ ڈیٹا تک رسائی حاصل کر لی ہے۔بلوچستان سے گرفتار را کے ایجنٹ کل بھوشن یادیو سے تفتیش کے دوران مزید سنسنی خیز انکشافات سامنے آئے ہیں، کل بھوشن یادیو نے سمندر میں دہشت گردی کے منصوبے کا اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ بلوچستان کے علیحدگی پسندوں کو سمندر کے سخت حالات اور اندھیرے میں لڑنے کی تربیت دی جارہی تھی جس کے لئے اس نے چاہ بہار میں کشتیاں خرید کر کھڑی کر رکھی تھیں، را ایجنٹ نے بتایا کہ ان کشتیوں کے ذریعے بندرگاہوں،پاک بحریہ کے جہازوں اور دیگر تنصیبات پر حملے کیے جانے تھے۔کلبھوشن یادو نے مزید انکشاف کیا کہ اس سلسلے میں علیحدگی پسندوں کو کشتیوں کے ذریعے ممبئی لے جایا جاتا تھا جہاں وہ تربیت مکمل کرنے کے بعد پاکستان آ کر حملے کرتے تھے، ادھر سیکیورٹی اداروں نے کلبھوشن یادیو کے موبائل فون اورانٹرنیٹ ڈیٹا تک رسائی حاصل کر لی ہے جس کے بعد تحقیقات کا دائرہ مزید وسیع کردیا گیا ہے جبکہ بھارتی ایجنٹ کے پاکستان میں ممکنہ ساتھیوں سے رابطوں کی تصدیق کی جا رہی ہے۔

شیئرکریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں